You are here:    Home      Urdu News      شوگرکین کمشنر کو تین روز میں کارروائی مکمل کرنے کا حکم

شوگرکین کمشنر کو تین روز میں کارروائی مکمل کرنے کا حکم

January 27, 2018
Published in Urdu News
Comments are off for this post.

لاہور:لاہور ہائی کورٹ نے وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف کی تین شوگرملوں کی کسانوں کو گنے کی قیمت کی ادائیگی سے متعلق رپورٹ بدھ تک طلب کر لی ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز جماعت اسلامی پنجاب کے امیر میاں مقصوداحمد کسانوں کے ہمراہ عدالت عالیہ میں پیش ہوئے جبکہ ان کے وکلاء نے موقف اختیار کیا کہ شوگر ملز مالکان کسانوں کو گنے کی حکومت کی جانب سے مقررکردہ 180 روپے فی من قیت ادا نہیں کر رہے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمد نے کہا کہ یہ” علی بابا چالیس چور” کا کنبہ ہے ۔ وزیر اعلی بابا جبکہ دیگر چالیس ملز مالکان چور ہیں ۔ اس موقع پرکسان بورڈ کے مرکزی رہنماسرفرازاحمد خان،چوہدری ذوالفقارایڈووکیٹ، سیف الرحمان جسرا’ ایڈووکیٹ، محمد فاروق چوہان ودیگر بھی موجود تھے۔ اس وقت کسان اپنا گنا 140 روپے سے 160 روپے فی من تک فروخت کرنے پر مجبور ہیں ۔ بعض شوگر ملیں کسانوں کو 180 روپے فی من گنے کی ادائیگی کی رسید دے کر عملا 160 روپے فی من ادا کر رہی ہیں سرفہرست وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف کی تین شوگر ملیں ہیں جس پر جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے استفسار کیا کہ کیا آپ نے میاں شہباز شریف کی ملوں کے خلاف شوگرکین کمشنر کو کوئی درخواست دی ہے ۔عدالت عالیہ نے ہدایت کی کہ فوری طور پر اس حوالہ سے درخواست دیں اور کین کمشنر کو حکم دیا کہ وہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی شوگر ملوں کے خلاف کارروائی کریں کہ وہ لاہور ہائی کورٹ کے احکامات پرعمل درآمد کیوں نہیں کررہیں۔وزیر اعلیٰ محض دکھاوے کے اقدامات کررہے ہیں۔بقول ان کے وہ ایسی شوگر مل مالکان کے خلاف کارروائی کریں گے جو180روپے فی من گنے کے نرخ ادا نہیں کررہے۔میراسوال یہ ہے کہ رمضان شوگر مل کے مالک میاں شہبازشریف کوکون گرفتار کرے گا؟۔شریف برادران کی تینوں ملوں کاڈیٹاہائی کورٹ میں پیش کریں گے۔عدالت عالیہ نے حکم دیا ہے کہ تین روز کے اندر ان درخواستوں پر کارروائی کر کے آئندہ بدھ کو رپوٹ پیش کریں۔سماعت بدھ تک ملتوی کر دی گئی۔انہوں نے کہاکہ گنے کے کاشتکاروں کو ریلیف دینے تک جماعت اسلامی اپنی جدوجہد جاری رکھے گی اورہمیں اس کے لیے سپریم کورٹ بھی جاناپڑا تو ہم جائیں گے۔ اس موقع پر کسان بورڈپاکستان کے نائب صدر سرفراز احمد خان نے کہا کہ انہوں نے عدالت عالیہ کو بتایا کہ کین کمشنر ایک چھوٹا سا کارندہ ہے جو بے بس ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کسان اپنے حق کے حصول کے لئے قانونی کارروائی کے ساتھ ساتھ احتجاج بھی جاری رکھیں گے ۔حکومت اپنے ہی 2نومبر2017کوجاری کردہ نوٹیفکیشن کی خلاف ورزی کررہی ہے۔کسانوں کے ساتھ مذاکرات ڈنگ ٹپاؤ کے سواکچھ نہیں۔انہوں نے کہا کہ دیگر شوگر ملز مالکان وزیر اعلی کی ملوں کے پیچھے چھپتے ہیں اور کہتے ہیں کہ وزیر اعلی کی ملیں 180 روپے کی ادائیگی کر دیں تو وہ بھی کر دیں گے ۔عدالت نے ہمیں یقین دھانی کروائی ہے کہ اس معاملے میں قانون پرعمل درآمد کروایاجائے گا اور شوگرمل مالکان کو پابندکریں گے کہ وہ180روپے فی من گناخریدیں اور کسانوں کااستحصال نہیں ہونے دیں گے۔ 

Comments are closed.

Our Mission

Jamaat views regarding the three terms ‘Al-Deen’, Divine Order’, and ‘Islamic Way of Life’ as synonyms.

Our mission of ‘Establishment of Deen’ does not mean establishing some part of it, rather establishing it in its entirety, in individual and collective life, and whether it pertains to prayers or fasting, haj or zakat, socio-economic or political issues of the life.

It is incumbent upon a believer to strive for establishing Islam in its entirety without discretion and division, and believer’s real objective is to attain Allah’s pleasure and success in the this world and hereafter, this cannot be realized without trying to establish Allah’s Deen in this world.

Contact Information

Head Office, Jamaat E Islami Punjab
Mansoora, Multan Road Lahore.

Email: info@punjabjamaat.org.pk

Phone: +92 42 35252177, +92 42 35437990-1

Fax: +92 42 35427685




Facebook   |   Twitter   |   Google Plus

Our Location