You are here:    Home      Urdu News      آئی ایم ایف سے ڈکٹیشن لے کر ملک چلانے کاتجربہ ناکام ہوچکاہے، ملکی وسائل سے استفادہ کرنے کیلئے حکمت عملی بنائی جائے

آئی ایم ایف سے ڈکٹیشن لے کر ملک چلانے کاتجربہ ناکام ہوچکاہے، ملکی وسائل سے استفادہ کرنے کیلئے حکمت عملی بنائی جائے

October 3, 2018
Published in Urdu News
Comments are off for this post.

لاہور:امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے کہاہے کہ سی پیک خطے کی خوشحالی اورپاکستان کی ترقی کاعظیم منصوبہ ہے۔ بھارت سمیت دیگر قوتیں اس منصوبے کوناکام بنانے کے لیے دن رات سازشوں میں مصروف ہیں۔پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کوکسی بھی صورت متنازعہ نہیں بننے دینا چاہئے، حکمران اس حوالے سے پائے جانے والے خدشات کو دور کریں۔سی پیک منصوبے میں سعودی عرب کی شمولیت کے حوالے سے بھی پارلیمنٹ کو مکمل طور پر اعتماد میں لیاجانا چاہئے۔قومی ایشو زپر پارلیمنٹ کونظرانداز کرنے کا سلسلہ اب ختم ہونا چاہئے۔انہوں نے کہاکہ آئی ایم ایف سے ڈکٹیشن لے کر ملک چلانے کاتجربہ پہلے بھی ناکام رہاہے اور آئندہ بھی ناکام ہی ہوگا۔آئی ایم ایف کے اشاروں پر مرتب کی جانے والی معاشی پالیسیوں سے ملک وقوم کو مہنگائی کے تحفے ہی ملتے رہے ہیں۔قومی خودمختاری اور خودداری کے لیے ضروری ہے کہ بیرونی امداد لینے کا سلسلہ بند اور کشکول کو ہمیشہ ہمیشہ کے لیے توڑاجائے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کو اللہ تعالیٰ نے بے بہا وسائل سے نوازا ہے، المیہ یہ ہے کہ ان وسائل سے غیر ملکی کمپنیاں فائدہ اٹھاکر ہر سال اربوں ڈالراپنے ممالک میں بھجوارہی ہیں۔حکومت پاکستان اس حوالے سے اپنی پالیسی کو واضح کرے اور ملکی وسائل سے خود استفادہ کرنے کے لیے حکمت عملی بنائی جائے۔انہوں نے کہاکہ بجلی کے نرخوں میں اضافے اور اووربلنگ نے عوام کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔بجلی کی کم نرخ میں پیداوار کے لیے ضروری ہے کہ آبی منصوبوں،کوئلے اور ہواسے بجلی حاصل کرنے والے منصوبوں پر وسیع پیمانے پر کام کیا جائے۔انہوں نے کہاکہ نئے آبی ذخائرتعمیر کرنے کے لیے سنجیدگی سے اقدامات ہونے چاہئیں۔بھاشاڈیم،مہمنداور کالاباغ ڈیم جیسے منصوبے ملکی بقاکے ضامن ہیں۔ماضی کے حکمرانوں نے اس حوالے سے مجرمانہ غفلت کامظاہرہ کیا۔پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت کم ہونے کی وجہ سے ہر سال اربوں ڈالر کاپانی سمندر بردہورہاہے۔انہوں نے کہاکہ ہندوستان تیزی سے ہمارے حصوں کے دریاؤں پر ڈیم تعمیر کررہاہے۔ اگرہندوستان کی آبی جارحیت جاری رہی تو پاکستان کی زرخیر زمین بہت جلدبنجر ہوجائے گی۔ضرورت اس امر کی ہے کہ بھارت کو اس گھناؤنی سازش سے بازرکھنے کے لیے عالمی دباؤبڑھایاجائے۔امیر العظیم نے مزیدکہاکہ میڈیا رپورٹس کے مطابق اس وقت ملک میں پانی کی شدیدقلت ہے جس کی وجہ سے پانی کاشرٹ فال 38فیصد ہوگیاہے۔اکتوبر ،نومبر اور دسمبر میں بارشیں نہ ہوئیں تو یہ شارٹ فال مزید بڑھ جائے گا جس سے خشک سالی کاخطرہ ہے۔فصلوں کومطلوب مقدار میں پانی کادستیاب نہ ہوناتباہی کا سبب بن سکتاہے۔موجودہ حکومت کو اس حوالے سے بروقت اقدامات کرنے ہوں گے۔

Comments are closed.

Our Mission

Jamaat views regarding the three terms ‘Al-Deen’, Divine Order’, and ‘Islamic Way of Life’ as synonyms.

Our mission of ‘Establishment of Deen’ does not mean establishing some part of it, rather establishing it in its entirety, in individual and collective life, and whether it pertains to prayers or fasting, haj or zakat, socio-economic or political issues of the life.

It is incumbent upon a believer to strive for establishing Islam in its entirety without discretion and division, and believer’s real objective is to attain Allah’s pleasure and success in the this world and hereafter, this cannot be realized without trying to establish Allah’s Deen in this world.

Contact Information

Head Office, Jamaat E Islami Punjab
Mansoora, Multan Road Lahore.

Email: info@punjabjamaat.org.pk

Phone: +92 42 35252177, +92 42 35437990-1

Fax: +92 42 35427685




Facebook   |   Twitter   |   Google Plus

Our Location