You are here:    Home      Urdu News      سپریم کورٹ کی جانب سے ٹی وی چینلز پر بھارتی مواد نشرکرنے کی پابندی اچھا اقدام ہے

سپریم کورٹ کی جانب سے ٹی وی چینلز پر بھارتی مواد نشرکرنے کی پابندی اچھا اقدام ہے

October 29, 2018
Published in Urdu News
Comments are off for this post.

لاہور:امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے کہاہے کہ پاکستان پٹرولیم کمپنی میں اربوں روپے گھپلوں اوراومنی گروپ کی شوگر ملوں سے 11ارب روپے کی چینی غائب ہونے کاانکشاف تشویش ناک اور لمحہ فکریہ ہے۔جس برطانوی کمپنی کے اثاثوں کی کل مالیت 60ملین تھی اسے پی پی ایل نے180ملین ڈالر میں کیسے خریدا؟،اس معاملے کی مکمل تحقیقات ہونی چاہئیں اور اس میں ملوث افراد کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزمختلف تقریبا ت سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ آئے روزقومی میڈیا میں کرپشن کی نئی سے نئی داستانیں سامنے آرہی ہیں۔نیب سمیت تمام انسداد بدعنوانی کے ادارے اپنی توجہ چند مخصوص کیسزتک محدود کیے ہوئے ہیں جبکہ پورے ملک میں بڑے بڑے اسکینڈلز سامنے آنے کے باوجود کسی قسم کی کوئی کارروائی نہیں ہورہی۔اگر کسی پر کوئی کارروائی کی بھی جاتی ہے تو روایتی اندازاپنایاجاتاہے اور بعدازاں معاملے کو سردخانے میں پھینک دیاجاتاہے جس کی مثال پانامالیکس میں بے نقاب ہونے والے دیگر436افراد کے خلاف کسی بھی قسم کی کارروائی کانہ ہونا ہے۔ملک میں بلاتفریق تمام کرپٹ افراد کامحاسبہ کرناہوگا۔انہوں نے کہاکہ اسرائیلی طیارے کی پاکستانی ایئر پورٹ پر آمد کے حوالے سے حکومتی وضاحت ناکافی ہے۔غیرملکی میڈیا کے مطابق جہازکاکوڈتبدیل کرکے لایاگیا۔اس حوالے سے اصل حقائق قوم اور پارلیمنٹ کے سامنے لائے جائیں۔عوام اس وقت شدیدبے چینی اور اضطراب میں مبتلا ہیں،ان کے تحفظات کودور کیاجاناچاہئے۔انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کی جانب سے ٹی وی چینلز پربھارتی مواد نشر کرنے کی پابندی ایک اچھااقدام ہے۔پاکستان کی اپنی تہذیب اورثقافت ہے۔ہندوستان سے آزادی حاصل کرنے کابنیادی مقصد بھی یہی تھا کہ مسلمانوں کو ایک ایساالگ ملک چاہئے جہاں وہ اسلام کے سنہری اصولوں کے مطابق زندگی بسرکرسکیں۔ہندوانہ کلچر اور مسلمانوں کے رہن سہن،تہذیب وتمدن میں زمین آسمان کافرق ہے۔ٹی وی چینلز کواسلامی تعلیمات اور ملکی مفادات کومدنظررکھتے ہوئے ضابطہ اخلاق کی پاسداری کویقینی بناناچاہئے۔بھارت ہندی میں ڈب کارٹونوں کی آڑ میں اپنے کلچر کوفروغ دیتے ہوئے ہمارے بچوں کی ذہن سازی کررہا ہے۔یہ مسلم معاشرے پر براہ راست ثقافتی حملہ ہے ،اس کا راستہ روکنا ہوگا۔

Comments are closed.

Our Mission

Jamaat views regarding the three terms ‘Al-Deen’, Divine Order’, and ‘Islamic Way of Life’ as synonyms.

Our mission of ‘Establishment of Deen’ does not mean establishing some part of it, rather establishing it in its entirety, in individual and collective life, and whether it pertains to prayers or fasting, haj or zakat, socio-economic or political issues of the life.

It is incumbent upon a believer to strive for establishing Islam in its entirety without discretion and division, and believer’s real objective is to attain Allah’s pleasure and success in the this world and hereafter, this cannot be realized without trying to establish Allah’s Deen in this world.

Contact Information

Head Office, Jamaat E Islami Punjab
Mansoora, Multan Road Lahore.

Email: info@punjabjamaat.org.pk

Phone: +92 42 35252177, +92 42 35437990-1

Fax: +92 42 35427685




Facebook   |   Twitter   |   Google Plus

Our Location